یوم نکبہ

یوم نکبہ پر یورپ بھر میں مظاہرے، خاتون صحافی کو خراج تحسین

پاک صحافت یوم نکبہ کی 74ویں سالگرہ پر یورپ کے مختلف ممالک کے دارالحکومتوں میں لوگ سڑکوں پر نکل کر اسرائیل کے ناجائز قبضے اور شہید فلسطینی صحافی کے قتل کی مذمت کرتے ہیں۔

14 مئی 1948 کو 7 لاکھ سے زائد فلسطینیوں کو ان کے گھروں سے زبردستی بے دخل کیا گیا اور وہاں غیر قانونی اسرائیل کو وجود بخشا گیا۔ اس تکلیف دہ واقعے کی یاد کو یوم نکبہ کے طور پر منایا جاتا ہے۔

پریس ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ہفتہ کو لندن میں یوم نکبہ کے موقع پر نکالی گئی ریلی میں معاشرے کے مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔

ہفتہ کی سہ پہر کے بعد برطانوی وزیر اعظم کی رہائش گاہ 10-ڈاؤن سٹریٹ کی طرف مارچ کرنے سے پہلے لوگ وسطی لندن میں بی بی سی کے ہیڈ کوارٹر کے باہر جمع ہوئے۔

مظاہرین نے فلسطین کے پرچم اٹھا رکھے تھے اور اسرائیلی فوجیوں کے ہاتھوں فلسطینیوں پر جاری مظالم پر شدید برہمی کا اظہار کر رہے تھے۔

ریلی میں موجود لوگوں نے اسرائیلی دہشت گردوں کے ہاتھوں فلسطینی صحافی شیرین ابو عقیلہ کے قتل کی مذمت کی جسے مغربی کنارے میں جنین کیمپ پر اسرائیلی دہشت گردوں کے حملے کی رپورٹنگ کے دوران گولی مار دی گئی۔

دوسری جانب فرانس کے دارالحکومت پیرس میں بھی مظاہرے ہوئے جن میں لوگوں نے فلسطینیوں کے خلاف دہائیوں سے جاری اسرائیلی جرائم کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں ہزاروں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے اور یوم نکبہ کی 74ویں سالگرہ کے موقع پر نکالی گئی ریلی میں شرکت کی۔ انہوں نے اسرائیلی دہشت گردوں کے ہاتھوں فلسطینی صحافی شیرین ابو عاقلہ کے قتل کی مذمت کی۔

ڈنمارک کے دارالحکومت کیپینگاہ میں بھی زبردست مظاہرے کیے گئے جس میں لوگوں نے یوم نکبہ منایا اور اسرائیلی فوجیوں کے ہاتھوں فلسطینی خاتون صحافی شیریں ابو عاقلہ کے قتل کی شدید مذمت کی۔

یہ بھی پڑھیں

جج

فلسطین کے حامی متن کو پسند کرنے پر انگریزی جج کیلئے سرکاری انتباہ

(پاک صحافت) ایک انگریز جج کو فلسطین کی حمایت میں ایک متن کو پسند کرنے پر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے