ملک کی بقاء کے لئے عوام کو حقیقی چناؤ کا موقع دیا جائے: شاہد خاقان

ملک کی بقاء کے لئے عوام کو حقیقی چناؤ کا موقع دیا جائے

اسلام آباد /لندن (پاک صحافت) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما و سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ جس شخص کے اندر  شہیدوں اور ان کے لواحقین کا درد نہ ہو ملکی مسائل حل کرنا اس کے بس کی بات نہیں  ملک کی بقاء  کے لیے عوام کو حقیقی چناؤ کا موقع دینا پڑے گا۔

تفصیلات کے مطابق جیونیوز کے پروگرام کیپٹل ٹاک میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ استعفوں کے معاملے پر آج بھی ہمارے ممبران سے رابطے کیے جارہے ہیں۔  شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ  میں نے اپنا کورونا وائرس کا ٹیسٹ کروایا، رزلٹ آیا ہے تو اب وطن واپس آرہا ہوں،  کورونا ایس او پیز کی وجہ سے نواز شریف سے ملاقات ناممکن ہے،  نہ کوئی پیغام ہے نہ پیغام دینے کی گنجائش ہے۔

مزید پڑھیں: مسلم لیگ (ن)کاسینیٹ انتخابات میں حصہ لینے کا اعلان

رہنما مسلم لیگ ن نے کہا کہ  شکرگزار ہوں کہ میری درخواست پر ایک دفعہ کے لیے نام ای سی ایل سے نکالا گیا، پہلے بھی میرا نام ای سی ایل میں رہا اور درخواست پر اجازت دی گئی،  میری درخواست پر تین ہفتے لگے لیکن ایک دفعہ نام نکالنے کی اجازت مل گئی۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ لڑائی کوئی نہیں ہم ملک کی بات کرتے ہیں، آج نظام آئین کے مطابق نہیں ہے، آج منتخب حکومت نہیں، انتخابات کروانا ہوں گے اس کے بعد ملک چلے گا۔انہوں نے کہا کہ یہ حکومت عوام کے دباؤ سے جائے گی، یہ حکومت جیسے آئی تھی ویسے ہی جائے گی، پارلیمنٹ مفلوج ہے وہاں عوام کی کوئی بات نہیں ہوتی، اس حکومت کو خطرہ عوام سے ہے، معیشت تباہ، بیروزگاری مہنگائی عروج پر ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ این آر او کا قانون مشرف نے بنایا تھا اور وہ ختم ہوگیا،  این آر او دینے کی کسی کو اجازت نہیں، نہ کسی نے این آر او مانگا ہے۔رہنما مسلم لیگ ن نے کہا کہ ہم نے اپنے دور میں نیب سے کوئی بات نہیں کی، نیب سے پوچھیں جس شخص کو اربوں روپے دیے گئے وہ ایک پیسے کی کرپشن نہیں ڈھونڈ سکا۔

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں