عالمی شہرت یافتہ شاعر اہل بیتؑ ڈاکٹر ریحان اعظمی انتقال کرگئے

شاعر اہل بیت ؑ

کراچی (پاک صحافت) عالمی شہرت یافتہ شاعر اہل بیت ؑ ڈاکٹر ریحان اعظمی آج  اپنے چاہنے والوں کو ہمیشہ کے لئے الوداع کر گئے۔ اہلِ خانہ کے مطابق ریحان اعظمی کافی عرصے سے علیل تھے۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ ان کی طبیعت خراب ہونے پر انہیں کراچی کے نجی اسپتال منتقل کیا گیا تھا، جہاں ان کی حالت سنبھل نہ سکی اور وہ خالقِ حقیقی سے جا ملے، انتقال کے وقت ان کی عمر 63 برس تھی۔  اہل خانہ کا کہنا ہے کہ نماز جنازہ بعد نماز مغرب مرکزی مسجد جعفر طیار میں ادا کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر ریحان اعظمی 7 جولائی 1958ء کو کراچی میں پیدا ہوئے تھے، انہوں نے نے 1974ء میں باقاعدہ شاعری کا آغاز کیا۔ اور کچھ ہی عرصے میں شہرت کی بلندیوں کو پہنچ گئے۔ خیال رہے کہ ڈاکٹر ریحان اعظمی  ایک طویل عرصہ پاکستان ٹیلی ویژن سے بحیثیت نغمہ نگار وابستہ رہے۔ ا س عرصے میں انہوں نے 4 ہزار سے زائد نغمات سپردِ قلم کیئے جن میں ایشیاء کا مشہور ترین گانا ’ہواہوا اے ہوا‘ اور ’خوشبو بن کر مہک رہا ہے سارا پاکستان‘ شامل ہیں، ’ہواہوا اے ہوا‘ کو معروف گلوکار حسن جہانگیر نے گایا تھا۔

ایک دور ایسا آیا جب ان کے اندر ایک انقلابی تبدیلی آئی جس کے بعد انہوں نے نغمہ نگاری سے ربط توڑ کرحمد و سلام، نعت، نوحہ، منقبت اور مرثیے سے تعلق قائم کر لیا۔رثائی ادب میں ان کی 25 سے زائد کتابیں شائع ہوچکی ہیں جن میں ’نوائے منبر‘، غم، ’آیاتِ منقبت‘ اور ’ایک آنسو میں کربلا‘ سمیت دیگر کئی کتب شامل ہیں۔ واضح رہے کہ ڈاکٹر ریحان اعظمی نے عالمی اور قومی سطح پر کئی تمغے بھی اپنے نام کئے۔ ہمہ جہت شاعر سے تمام بڑے نوحہ خوانوں نے نوحےلکھوائے جو ان کی وجہ شہرت بنے اسکے علاوہ ریحان اعظمی استاد، صحافی اورقلم کاربھی تھے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں