امپورٹر کو مارکیٹ سے جعلی انجیکشن واپس اٹھانے کی ہدایت

اسلام آباد (پاک صحافت) ڈریپ (ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان) نے بینائی متاثر کرنے والے انجیکشن کا اسٹاک امپورٹر کو مارکیٹ سے واپس اٹھانے کی ہدایت کر دی۔ ذرائع کے مطابق متعلقہ انجیکشن کی فروخت اور استعمال پر عارضی طور پر  پابندی لگائے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق متعلقہ انجیکشن کے امپورٹر کو حکم نامہ ارسال کیا گیا ہے جس میں اُنہیں مارکیٹ سے متعلقہ انجیکشن کا اسٹاک واپس اٹھانے کی ہدایت کی ہے۔ ڈریپ ذرائع کے مطابق صوبوں کو متعلقہ انجیکشن کا استعمال روکنے کے لیے اقدامات کی ہدایات بھی جاری کی گئی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈرگ لیبارٹری کی رپورٹ ملنے پر متعلقہ انجیکشن کے بارے میں حتمی فیصلہ ہو گا۔

واضح رہے کہ دوسری جانب پنجاب کے نگراں صوبائی وزیر برائے پرائمری اینڈ ہیلتھ کیئر ڈاکٹر جمال ناصر کا کہنا ہے کہ انجیکشن لگنے سے جن کی بینائی متاثر ہوئی ہے ان کا مفت علاج کیا جائے گا۔ ڈاکٹر جمال ناصر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایمرجنسی انجیکشن نہیں ہے، یہ ملٹی نیشنل کمپنی کا بنایا ہوا ہے، جس پر پابندی لگائی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

بلاول بھٹو

پیپلزپارٹی کی حکومت بنا کر عوام کو ان کا حق دیں گے۔ بلاول بھٹو

کوہاٹ (پاک صحافت) بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی کی حکومت بنا کر عوام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے