پابندیاں ہٹانے اور جوہری معاہدے کی تجدید پر بات چیت کا آغاز

تھران {پاک صحات} آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں اسلامی جمہوریہ ایران اور پانچ ممالک کے نمائندوں کے درمیان مذاکرات کا آغاز ہوگیا ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق جمعرات سے ویانا میں ایک بار پھر مذاکرات کا آغاز ہو گیا ہے جس کا مقصد ایران پر سے پابندیاں اٹھانا اور 2015 کے جوہری معاہدے کی تجدید کرنا ہے۔ اس کے علاوہ ایران کے جوہری مذاکرات کار اور نائب وزرائے خارجہ میں سے ایک علی باقری کنی نے بھی یورپی یونین کے خارجہ پالیسی کے نائب سربراہ اینریک مورا سے ملاقات کی۔ جس کے بعد انہوں نے آسٹریا کے سیکرٹری خارجہ پیٹر لاونسکی سے بھی ملاقات کی جس میں جوہری مذاکرات کی تازہ ترین صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ویانا پہنچنے کے فوراً بعد علی بکری کانی نے روس کے اعلیٰ جوہری مذاکرات کار میخائل ولیانوف سے بھی ملاقات کی۔

مٹنگہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ یورپی یونین کے رابطہ کار اینریک مورا نے ایران کے اعلیٰ جوہری مذاکرات کار علی باقری سے ملاقات کے بعد ایران کے امور کے لیے امریکی نمائندہ خصوصی رابرٹ مالی سے ملاقات کی ہے جس کی تفصیلات ابھی تک سامنے نہیں آئی ہیں۔ ویانا پہنچنے پر علی بکری کنی نے کہا کہ ایران اس شرط پر فوری طور پر مسئلہ حل کرنے کے لیے تیار ہے کہ امریکا بھی سنجیدگی کا مظاہرہ کرے۔ غور طلب ہے کہ ایران پر سے پابندیاں ہٹانے اور جوہری معاہدے کی بحالی کے لیے بات چیت تین ماہ تک تعطل کے بعد جمعرات کو آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں دوبارہ شروع ہوئی ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں