شمالی کوریا

جاسوس سیٹلائٹ سے وائٹ ہاؤس کی دن رات نگرانی

پاک صحافت شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اپنے جاسوس سیٹلائٹ سے دن رات وائٹ ہاؤس پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

کم کے اس قدم سے امریکہ تناؤ میں آ گیا ہے۔ کیونکہ شمالی کوریا کے پاس اب مہلک میزائلوں کا ذخیرہ بھی ہے جس کا اس نے حالیہ دنوں میں تجربہ کیا ہے۔

شمالی کوریا کے تازہ اقدام پر امریکہ کی نیندیں اڑ گئی ہیں۔ وائٹ ہاؤس امریکی صدر کی رہائش گاہ اور دفتر ہے۔ ایسے میں شمالی کوریا کا وائٹ ہاؤس پر 24 گھنٹے نظر رکھنا امریکہ کے لیے تناؤ میں اضافہ کرنے والا ہے۔

شمالی کوریا نے حال ہی میں ایک فوجی جاسوس سیٹلائٹ کامیابی کے ساتھ مدار میں بھیج دیا ہے۔ امریکہ، جاپان، جنوبی کوریا جیسے ممالک اس کامیابی سے پریشان ہو گئے۔ شمالی کوریا کا دعویٰ ہے کہ اس کا پہلا جاسوس سیٹلائٹ خلا میں بھیجے جانے کے بعد سے وائٹ ہاؤس، پینٹاگون اور قریبی امریکی بحری اسٹیشنوں کی تصاویر بھیج رہا ہے۔ شمالی کوریا کا یہ دعویٰ امریکا، جنوبی کوریا اور جاپان کے لیے تشویش کا باعث بن گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اپنے فوجی جاسوس سیٹلائٹ کی کامیابی پر بے حد خوش ہیں۔ سرکاری میڈیا نے کہا کہ کم جونگ ان نے پچھلی تصاویر کے ساتھ خلا سے بھیجی گئی تازہ ترین تصاویر بھی دیکھی تھیں۔ کم کا دعویٰ ہے کہ امریکہ کے فوجی اڈے اب ان کے سیٹلائٹ کی پہنچ میں ہیں۔ اس کے علاوہ یہ دعویٰ بھی کیا جا رہا ہے کہ کم کے میزائل اب پہلے سے زیادہ درست اور درست ہو جائیں گے۔

جاسوس سیٹلائٹ نے امریکہ اور جنوبی کوریا کے اہداف کی تصاویر بھیجی ہیں۔ شمالی کوریا نے کہا تھا کہ سیٹلائٹ کچھ ٹھیک ٹیوننگ کے بعد یکم دسمبر کو اپنا جاسوسی مشن باضابطہ طور پر شروع کرے گا، لیکن سرکاری کورین سنٹرل نیوز ایجنسی نے منگل کو کہا کہ سیٹلائٹ کی ٹھیک ٹیوننگ کا عمل ایک یا دو دن پہلے ہی ختم ہونا تھا۔ جلدی کی جا رہی ہے.

ایجنسی نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ شمالی کوریا نے ایک نئے جاسوس سیٹلائٹ کے ذریعے امریکی جنگی جہاز یو ایس ایس کارل ونسن کی تصاویر بھی حاصل کی ہیں، جو 21 نومبر کو گوام کے آسمان سے لی گئی تھیں۔ تاہم شمالی کوریا نے ابھی تک نئے سیٹلائٹ کے ذریعے لی گئی تصویر کو ظاہر نہیں کیا۔ اس بات کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے کہ فوجی جاسوس سیٹلائٹ آپریشنل ہے یا نہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے