پوتن

روس پر پابندیاں لگا کر مغربی ممالک خوفناک جال میں پھنس گئے: امریکی میگزین

واشنگٹن {پاک صحافت} امریکی اخبار دی ہل نے دعویٰ کیا ہے کہ یوکرین کے بحران پر امریکا اور دیگر مغربی ممالک روس پر پابندیاں لگانے کے جال میں پھنس چکے ہیں۔

میگزین نے لکھا ہے کہ پابندیاں اس لیے لگائی گئی ہیں کہ روس کی معیشت تباہ ہو جائے لیکن حقیقت یہ ہے کہ پابندیاں خود ان ممالک کے لیے پریشانی کا باعث بنی ہیں جنہوں نے پابندیاں عائد کی ہیں۔

روس پر لگائی گئی پابندیوں کے بارے میں ابتدا میں کہا گیا تھا کہ وہ تباہی کے معاشی ہتھیار ہیں جو روس کی معیشت کو تباہ کر دیں گے لیکن یہ پابندیاں دو دھاری تلوار ثابت ہوئی ہیں۔ اس سے روس کو نقصان پہنچا ہے، لیکن پابندیاں عائد کرنے والے ممالک پر بھی شدید دباؤ ہے۔

میگزین نے لکھا کہ پابندیوں سے دنیا بھر میں اشیاء اور توانائی کی قیمتوں میں اضافہ ہوا جس کے نتیجے میں روس تیل اور گیس مہنگے داموں فروخت کر رہا ہے اور برآمدات میں کمی کے باوجود اسے بہت زیادہ رقم مل رہی ہے۔

دوسری جانب بین الاقوامی قیمتوں میں اضافے نے پابندیاں عائد کرنے والے ممالک کے اندر سیاسی مسائل پیدا کر دیے ہیں۔

میگزین نے لکھا کہ روس بین الاقوامی مالیاتی نیٹ ورک سے کٹ گیا تھا لیکن اس کے باوجود روس کی کرنسی روبل کی پوزیشن میں مسلسل بہتری آرہی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ پابندیوں میں امریکہ کی حمایت کی وجہ سے جاپان کی کرنسی کی قدر گزشتہ بیس سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے