ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کی نیویارک میں مصروفیات

ابراہیم رئیسی

نیویارک (پاک صحافت) ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کیا اور مختلف ممالک کے سربراہان سے اہم ملاقاتیں کی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کی پہلی حاضری ان کے خصوصی اقدام اور شہید جنرل حاج قاسم سلیمانی کی تصویر کو بلند کرنے کے ساتھ تھی جو کہ تیزی سے ایک اہم خبر بن گئی تاکہ دنیا ایک بار پھر امریکی جرائم اور ایران کے عزم کا مشاہدہ کرے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ایرانی صدر کی تقریر کے دوران اسرائیلی نمائندے بہت پریشان ہوئے اور ہال سے باہر چلے گئے۔ ابراہیم رئیسی کی تقریر کا بنیادی پیغام انصاف اور جبر و تسلط کی نفی پر زور دینا تھا جسے انہوں نے انسانی حقوق، دہشت گردی اور ایٹمی مسائل میں مثالوں کے طور پر بیان کیا اور یہ کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنی آزادی کے تحفظ کی راہ میں آگے بڑھے گا۔ تقریر کے بعد انہوں نے لبنان اور جاپان کے وزرائے اعظم اور فن لینڈ کے صدر سے ملاقات اور گفتگو کی۔ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ ملاقات ان اہم ترین ملاقاتوں میں سے ایک تھی جو وسیع مسائل کی وجہ سے 45 منٹ کی بجائے 90 منٹ تک جاری رہی۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں