بھارت، بہار میں اتحاد ٹوٹا، نئی حکومت بنے گی

نتیش کمار

پاک صحافت بھارتی ریاست بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے بھارتیہ جنتا پارٹی کے ساتھ جاری اتحاد کو توڑتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے ہمیشہ ہمارے ساتھ دھوکہ کیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بہار میں نتیش کمار کی جماعت جے ڈی یو اور بی جے پی کے درمیان جاری اتحاد آج ٹوٹ گیا۔

منگل کو بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کی رہائش گاہ پر ایک میٹنگ کے بعد اتحاد ٹوٹنے کا اعلان کیا گیا۔ نتیش کمار نے الزام لگایا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے ہمیشہ ہمیں کمزور کرنے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2013 سے اب تک بی جے پی صرف مجھے دھوکہ دیتی رہی ہے۔ نتیش کمار کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی نے میری بہت تذلیل کی۔

اب انہوں نے نئی حکومت بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔ نتیش کمار نے گورنر کو 160 ایم ایل اے کی حمایت کا خط دیا ہے۔ انہوں نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ہمارے تمام ایم ایل اے اور ایم پی نے این ڈی اے اتحاد سے باہر رہنے کا مشورہ دیا ہے۔ نتیش کمار نے کہا کہ اس تجویز کے بعد حملہ نے استعفیٰ دے دیا۔ بی جے پی سے اتحاد توڑنے کے بعد نتیش کمار اب فلور ٹیسٹ کی تیاری کر رہے ہیں۔ بہار قانون ساز اسمبلی میں جے ڈی یو کے کل 45 ایم ایل اے ہیں۔

بتایا جا رہا ہے کہ نتیش کمار نے بی جے پی-جے ڈی یو اتحاد کے ٹوٹنے سے پہلے کانگریس صدر سونیا گاندھی سے فون پر بات کی تھی۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان بات چیت کافی دیر تک جاری رہی۔ ایسی خبریں بھی ہیں کہ نتیش کمار اور سونیا گاندھی نے 15 دنوں میں تین بار بات کی ہے۔

سیاسی پنڈتوں کا کہنا ہے کہ حالیہ حالات کو دیکھتے ہوئے نتیش کمار کو یہ محسوس ہونے لگا تھا کہ ان کی حالت مہاراشٹر کے ادھو ٹھاکرے جیسی نہ ہو جائے اور ان کی پارٹی کے لیڈر ان کے ہاتھ سے نہ نکل جائیں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں